وہ پهول سی لڑکی ہے
اُس پهول سی لڑکی کو
کچھ علم نہیں اِس کا
اِس شہر کے لوگوں کا
دستور عجب یہ ہے
بے عیب رہے جو بھی
عیبوں سے اُسے بهر دو
پھولوں کو مسل ڈالو

محمد بلال اعظم

Share: