خالق تری(ﷺ) تعریف میں خود محوِ ثنا ہے
الحمد سے والناس تلک تیری(ﷺ) ادا ہےخورشیدِ جہاں تاب ترے(ﷺ) حسن کا پرتو
یہ مہرِ منور ترا(ﷺ) نقشِ کفِ پا ہےمنزل تری(ﷺ) آغاز وہیں سے ہوئی آقا(ﷺ)
جبریلؑ سا نوری بھی جہاں جا کے رکا ہےیہ وقت کے دھارے بھی تو دربان ہیں تیرے(ﷺ)
مجبور زمانہ ترے(ﷺ) قدموں میں پڑا ہےہر شخص نے اوڑھا ہے شریعت کا لبادہ
ہر شخص کی پوشاک پہ تصویرِ ریا ہےجب  حشر  کا دن ہو، تری(ﷺ) قربت ہو میسر
ہم خاک نشینوں کی بس اتنی سی دعا ہےیہ خاص کرم ہے کہ تری(ﷺ) نعت لکھی ہے
ورنہ مری اوقات، مرا ظرف ہی کیا ہے!اعظمؔ سا گنہگار ترے(ﷺ) در پہ سوالی
اے رحمتِ عالم(ﷺ)! تری(ﷺ) رحمت بھی جدا ہے

محمد بلال اعظم

Share: