جب عمر بھر نہ آئیں نبھانی محبتیں
پھر کیا کسی پہ ہم نے لُٹانی محبتیںاب شب بخیر زندگی، پھر رات ہو گئی
اور یاد آ رہی ہیں پرانی محبتیںاب نفرتوں کی آگ میں جلنے لگا ہے دل
اب کیا کسی سے ہم نے بڑھانی محبتیںتازہ رفاقتوں سے اب اکتا گیا ہوں میں
پھر ڈھونڈنے لگا ہوں پرانی محبتیںیہ کس خرامِ ناز کی آمد ہے شہر میں
جو پڑ رہی ہیں ہر سو بچھانی محبتیںاک گلشنِ  بہار کا معمار ہوں  بلالؔ
میراث میری ہے مرے جانی، محبتیں

محمد بلال اعظم

Share: