عشق گرداب کی صورت ہے سہارے واجب
دشمنِ جاں ہوں کہ پھر جان سے پیارے، واجبہم اگر شعر بھی لکھیں تو قیامت ٹھہرے
وہ سرِ شام اگر زلف سنوارے، واجبدشتِ مایوسی میں بھی اُس نے کہا مجھ سے بلالؔ
جب سمندر ہوئی آنکھیں تو کنارے واجب

محمد بلال اعظم

Share: